ابتدا

اردو_لغت سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

اینڈرائیڈ اپلیکیشن اردو انسئیکلوپیڈیا کی اینڈرائیڈ اپلیکشن کا اجراء کر دیا گیا ہے۔ ڈاؤنلوڈ کرنے کے لیے ابھی کلک کریں۔

Urdu Encyclopedia on Google Android

اردو
اردو نستعلیق رسم الخط میں
برصغیر پاک و ہند کے اکثر علاقوں میں بولی اور سمجھی جانے والی زبان جس کے لغات میں پراکرت نیز غیر پراکرت، دیسی لفظوں کے ساتھ ساتھ عربی فارسی ترکی اور کچھ یورپی زبانوں کے الفاظ بھی شامل ہیں اور جس کی قواعد میں عہد بہ عہد تصرفات اور مقامی اختلافات کے باوجود آریائی اثر غالب ہے۔ (ابتداءً ہندوی یا ہندی کے نام سے متعارف رہی۔

اِبْتِدا {اِب + تِدا} (عربی)

ب د ء، اِبْتِدا

عربی زبان سے اسم مشتق ہے۔ ثلاثی مزید فیہ کے باب افتعال سے مصدر ہے عربی میں اس کا املا ابتداء ہے۔ اہل اردو ء کی آواز نہ ہونے کی وجہ سے ء لکھنا فصیح نہیں سمجھتے۔ 1582ء کو "کلمۃ الحقائق" میں مستعمل ملتا ہے۔

اسم نکرہ (مؤنث - واحد)

فہرست

[ترمیم] معانی

1. کسی امر کی بسم اللہ، شروعات، آغاز۔

"غسانیوں کے حملے کی ابتدا جس طرح ہوئی وہ اوپر گزر چکا ہے"۔ [1]

شروع کرنے یا ہونے کا عمل۔

؎ بھیگی ہے رات فیض غزل ابتدا کرو

وقت سرود، درد کا ہنگام ہی تو ہے [2]

2. غیر معین اور نامعلوم قدیم ترین زمانہ، ازل۔

"ابتدا میں خدا نے آسمان اور زمین کو پیدا کیا"۔، [3]

3. کسی چیز یا امر کا ابتدائی دور، شروع کا زمانہ، اوائل۔

"مولوی چراغ علی مرحوم نے ابتدا میں ایک معمولی منشی کی طرح دفتر میں ملازمت کی"۔، [4]

4. پہلا سرا، کسی شے کے شروع ہونے کی طرف کا کنارہ۔

؎ سنی حکایت ہستی تو درمیاں سے سنی

نہ ابتدا کی خبر ہے نہ انتہا معلوم، [5]

5. { عروض } مصرع دوم کا رکن اوّل۔

"ازالہ ..... اکثر عروض و ضرب میں واقع ہوتا ہے حشو میں کم، اور صدرو ابتدا میں بالکل نہیں آتا"۔، [6]

6. مبتدا۔

؎ موضوع اپنا جانتا منطق کو تس پر

محمول ابتدا ہی کو کہتا تھا بے خبر، [7]

[ترمیم] انگریزی ترجمہ

beginning, commencement, exordium; birth, rise, source, origin

[ترمیم] مترادفات

اَوَّل، اَز، بُنْیاد، پَرْداز، اُٹھان، پَیدائِش، اِفْتِتاح، تَمْہِید، عُنْفُوان، مُبْدا، شُرُوع، آغاز، آسْتائی، اِجْرا،

[ترمیم] مرکبات

اِبْتِداءُ الْمَرَض، اِبْتِدائے جُزْئی، اِبْتِدائے کُلّی

[ترمیم] روزمرہ جات

ابتدا پڑنا 

آغاز یا شروعات ہونا، بنا قائم ہونا، داغ بیل ڈالی جانا۔

؎ ابتدا ہی بری پڑی میری رنج بے انتہا میں رہتا ہوں، [8]

ابتدا ڈالنا 

آغاز کرنا، بنیاد رکھنا، داغ بیل ڈالنا۔

؎ جفا سہنے کی عادت یعنی بنیاد وفا ڈالی کسی سے میں نے راہ و رسم کی یوں ابتدا ڈالی، [9]

[ترمیم] حوالہ جات

  1. ( 1914ء، سیرۃ النبی، 9:2 )
  2. ( 1954ء، زنداں نامہ، فیض، 109 )
  3. ( 1922ء، موسٰی کی توریت مقدس، 1 )
  4. ( 1935ء، چند ہم عصر، 26 )
  5. ( 1927ء، شاد، میخانہ الہام، 182 )
  6. ( 1925ء، بحرالفصاحت، 163 )
  7. ( 1810ء، میر، کلیات، 28 )
  8. ( 1911ء، نذر خدا، 91 )
  9. ( 1950ء، ترانہ وحشت، 118 )

[ترمیم] مزید دیکھیں

عرض ناشر
لغت کو ممکنہ غلطیوں سے پاک کرنے کی پوری کوشش کی گئی ہے پھر بھی انسان خطا کا پتلا ہے لغت کو مزید بہتر بنانے کے لئے یا لغت کے استعمال میں کسی بھی قسم کی دشواری کی صورت میں admin@urduencyclopedia.org سے رابطہ کریں۔
ذاتی اوزار
متغیرات
ایکشنز
رہنمائی
اوزاردان
دیگر شعبہ جات
Besucherzahler brides of ukraine
website counter