اصول

اردو_لغت سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

اینڈرائیڈ اپلیکیشن اردو انسئیکلوپیڈیا کی اینڈرائیڈ اپلیکشن کا اجراء کر دیا گیا ہے۔ ڈاؤنلوڈ کرنے کے لیے ابھی کلک کریں۔

Urdu Encyclopedia on Google Android

اردو
اردو نستعلیق رسم الخط میں
برصغیر پاک و ہند کے اکثر علاقوں میں بولی اور سمجھی جانے والی زبان جس کے لغات میں پراکرت نیز غیر پراکرت، دیسی لفظوں کے ساتھ ساتھ عربی فارسی ترکی اور کچھ یورپی زبانوں کے الفاظ بھی شامل ہیں اور جس کی قواعد میں عہد بہ عہد تصرفات اور مقامی اختلافات کے باوجود آریائی اثر غالب ہے۔ (ابتداءً ہندوی یا ہندی کے نام سے متعارف رہی۔

اُصُول {اُصُول} (عربی)

ا ص ل، اَصْل، اُصُول

عربی زبان کے لفظ اصل سے جمع ہے۔ اردو میں بطور جمع اور واحد بھی مستعمل ہے۔ سب سے پہلے 1609ء "قطب مشتری" میں بطور واحد مستعمل ہے۔

اسم نکرہ (مذکر - جمع)

واحد: اَصْل {اَصْل}

فہرست

[ترمیم] معانی

1. درختوں وغیرہ کی جڑیں۔

"چھوٹی شاخوں میں سے اور چھوٹی شاخیں پھوٹتی ہیں ----- تمام اصول باہم ملصق اور گندھے ہوئے ہوتے ہیں۔"، [1]

2. بنیادی باتیں جن سے ضمنی مسائل یا فروعات پیدا ہوں، خصوصاً کسی علم یا فن کے کلیات و مسلمات۔

"شخص عقیل کو فرض ہے کہ تحقیق علمی ----- کے واسطے ان سب علوم کے اصول اور فروع کو مطالعہ کریں۔"، [2]

3. طور، طریقے، قرینے، ڈھنگ؛ رسم و رواج۔

؎ براق کے نظر آنے لگے فرس میں اصول

نقاب منہ سے پٹی کھل گیا گلاب کا پھول، [3]

4. { دینیات } دین کے بنیادی عقائد (جو مذاہب عالم کی کتب دینیہ میں مذکور ہیں)۔

"ہر ایک دین کے علما اور بزرگان مذہب سے ملوں اور ان عقائد کے اصول و فروغ کو پوچھوں۔" [4]

مسائل دینی میں فقیہ یا امام کے فتوے، احکام شرع۔

"ایسی دیگر اشیاء کو جو بروئے اصول اہل اسلام ناجائز ہیں مسجد کے اندر لے جانے کی ممانعت ہے۔" [5]

تقسیم میراث میں وہ وارث جس کا حصہ متعین ہے، آبا و اجداد، ذوی الفروض۔

"تمھارے وارث خواہ تمھارے اصول ہوں یا فروع، ان میں سے دنیا میں اور آخرت میں کون تم کو زیادہ کام آنے والا ہے۔" [6]

مسائل شرعی (روزہ نماز وغیرہ) میں امام یا مجتہد کے فتوے پر عمل کرنے کا مسلک، اجتہاد، اخباریوں کے مسلک کی ضد۔

؎ ایماں کے سلسلے کو نہ زنہار توڑیے

سنگ اصول سے سراخبار توڑیے [7]

5. { عروض } سالم ارکان جن کی مختلف ترکیبوں سے شعر کے وزن کے لیے بحریں بنائی گئ ہیں، افاعیل۔ (اور وہ حسب ذیل ہیں : فاعِلاتُن، مُسْتَفْعِلُن، مَفاعِیلُن، مَُفاعَلَتُن، مُتَفاعِلُن، مَفْعُوْلات، فاعِلُن، فَعُولُن)۔

؎ سالم اصول اور نہ افاعیل رہ گئے

مفعول فاعلات مفاعیل رہ گئے، [8]

6. { طب } عناصر : آگ، ہوا، پانی، خاک۔

"انھیں ارکان کو اصول اور عناصر اور استقسات کہتے ہیں ----- اور وہ چار ہیں : پہلی آگ ----- دوسری ہوا ----- تیسری پانی ----- چوتھی خاک۔"، [9]

[ترمیم] انگریزی ترجمہ

roots, fundamentals, essentials, first principles; general or universal laws; doctrines, tenets; breeding, manners; a musical mode or tone

اسم نکرہ [10]

جمع غیر ندائی: اُصُوْلوں {اُصُو + لوں (و مجہول)}

[ترمیم] معانی

1. دستور، روایت، طریقہ، چلن۔

"تم نے اس پہلے اصول کو کہ تم سب ایک عاقل ماں کے بچے ہو توڑ دیا۔"، [11]

2. قاعدہ، ضابطہ۔

"اصول تارید کے تحت ----- دیکھیے صندوق کی ----- جمع بنائی۔"، [12]

3. { اسلامیات } علم اصول فقہ۔

"ادب و بلاغت پر موقوف نہیں، فقہ، اصول، علم کلام سب کا ماخذ قرآن مجید ہے۔"، [13]

4. { موسیقی } راگ کے بندھے ہوئے سر یا تال، موسیقی کی ایک پوری گت، دھن؛ ساز، باجا، خصوصاً طبلہ۔

؎ دل کو خوش آیا جو بلبل کے ترانوں کا اصول

وجد میں جھومے شجر کھلنے لگے لاکھوں پھول، [14]

5. عنصری خصوصیت، عنصریت۔

"آتش کی قوت صرف اس کے اصول میں ہوتی ہے۔"، [15]

6. { ریاضی }جمع، تفریق، ضرب تقسیم اور جذر وغیرہ؛ ریاضی کے قاعدے۔

"اصول ارثما طیقی میں اس کی ایک کتاب یونان میں مشہور تھی۔"، [16]

[ترمیم] مترادفات

قَواعِد، رَسْم، گُر، قانُون، آئِین، ضابِطَہ،

[ترمیم] مرکبات

اُصُولِ اَرْبَعَہ، اُصُولِ اَوَّلِیَّہ، اُصُول پَرَسْت، اُصُول پَسَنْد، اُصُولِ حَدِیث، اُصُولِ دِین، اُصُول فِقَہ، اُصُول مُتَعارَفَہ، اُصُولِ مَوضُوعَہ

[ترمیم] حوالہ جات

  1. ( 1910ء، مبادی سائنس، 24 )
  2. ( 1877ء، رسالہ، تاثیر الانظار، 27 )
  3. ( 1971ء، رشید (پیارے صاحب)گلزار رشید، 77 )
  4. ( 1803ء، خردافروز، 17 )
  5. ( 1905ء، یادگار دہلی، 32 )
  6. ( 1860ء، فیض الکریم تفسیر قرآن العظیم، 452 )
  7. ( 1823ء، ہوس، دیوان (ق)99 )
  8. ( 1912ء، شمیم، مرثیہ(ق)3 )
  9. ( 1873ء، مطلع العجائب (ترجمہ)290 )
  10. ( مذکر - واحد )
  11. ( 1935ء، چند ہم عصر، 228 )
  12. ( 1934ء،منشورات، کیفی، 70 )
  13. ( 1904ء، مقالات شبلی، 26:1 )
  14. ( 1917ء، رشید (پیارے صاحب)گلزار رشید، 13 )
  15. ( 1877ء، عجائب المخلوقات اردو، 137 )
  16. ( 1926ء، شرر، مضامین، 3 : 58 )

[ترمیم] مزید دیکھیں

عرض ناشر
لغت کو ممکنہ غلطیوں سے پاک کرنے کی پوری کوشش کی گئی ہے پھر بھی انسان خطا کا پتلا ہے لغت کو مزید بہتر بنانے کے لئے یا لغت کے استعمال میں کسی بھی قسم کی دشواری کی صورت میں admin@urduencyclopedia.org سے رابطہ کریں۔
ذاتی اوزار
متغیرات
ایکشنز
رہنمائی
اوزاردان
دیگر شعبہ جات
Besucherzahler brides of ukraine
website counter