لحن

اردو_لغت سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

اینڈرائیڈ اپلیکیشن اردو انسئیکلوپیڈیا کی اینڈرائیڈ اپلیکشن کا اجراء کر دیا گیا ہے۔ ڈاؤنلوڈ کرنے کے لیے ابھی کلک کریں۔

Urdu Encyclopedia on Google Android


لَحْن {لَحْن (فتحہ ل مجہول)} (عربی)

ل ح ن، لَحْن

عربی زبان میں ثلاثی مجرد کے باب سے مشتق اسم مصدر ہے۔ اردو زبان میں بطور اسم استعمال ہوتا ہے۔ 1772ء کو "دیوانِ فغاں" میں تحریراً مستعمل ملتا ہے۔

اسم کیفیت (مذکر - واحد)

جمع: لَحان {لَحان (فتحہ ل مجہول)}

فہرست

[ترمیم] معانی

1. سریلی آواز؛ خوش نوائی، خوش گلوئی، خوش آوازی۔

"سوز خواں تخت سے اتر چکے تھے، ان کے لحن کی گونج ابھی لہو میں گردش کر رہی تھی۔"، [1]

2. { موسیقی } نغمہ آہنگ، راگ، سُر۔

"شاعری کا بنیادی لحن عروض اور گرامر کی کتابوں سے نہیں شاعر کی زندگی سے پھوٹا کرتا ہے۔"، [2]

3. اعراب یا بنیادی اصول کی غلطی۔

"بولا عکرمہ، کیا مصحف لکھے گئے بعد عثمان رضی اللہ عنہ کو بتلائے، عثمان اُس میں دیکھے، اس کے چند حرفوں میں لحن ہے یعنی اعراب کی خطا ہے۔"، [3]

4. ایک قسم کا معیوب قافیہ۔ (فرہنگ آصفیہ؛ جامع اللغات)

5. { تجوید } قرآن پاک کو تجوید کے خلاف پڑھنا۔ (علم التجوید، 55)

[ترمیم] مترادفات

سُر، آواز، لَہْجَہ،

[ترمیم] مرکبات

لَحْنِ داؤُد

[ترمیم] حوالہ جات

  1. ( 1983ء، قیدی سانس لیتا ہے، 195 )
  2. ( 1988ء، فیض، شاعری اور سیاست، 98 )
  3. ( 1860ء، فیض الکریم، 808 )

[ترمیم] مزید دیکھیں

ذاتی اوزار
متغیرات
ایکشنز
رہنمائی
اوزاردان
دیگر شعبہ جات
Besucherzahler brides of ukraine
website counter