گرد

اردو_لغت سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی, تلاش

اینڈرائیڈ اپلیکیشن اردو انسئیکلوپیڈیا کی اینڈرائیڈ اپلیکشن کا اجراء کر دیا گیا ہے۔ ڈاؤنلوڈ کرنے کے لیے ابھی کلک کریں۔

Urdu Encyclopedia on Google Android

اردو
اردو نستعلیق رسم الخط میں
برصغیر پاک و ہند کے اکثر علاقوں میں بولی اور سمجھی جانے والی زبان جس کے لغات میں پراکرت نیز غیر پراکرت، دیسی لفظوں کے ساتھ ساتھ عربی فارسی ترکی اور کچھ یورپی زبانوں کے الفاظ بھی شامل ہیں اور جس کی قواعد میں عہد بہ عہد تصرفات اور مقامی اختلافات کے باوجود آریائی اثر غالب ہے۔ (ابتداءً ہندوی یا ہندی کے نام سے متعارف رہی۔

گَرْد {گَرْد} (فارسی)

اصلاً فارسی زبان کا لفظ ہے۔ اور بطور اسم مستعمل ہے۔ اردو میں فارسی سے ماخوذ ہے اور بطور اسم استعمال ہوتا ہے۔ 1564ء کو "دیوان حسن شوقی" میں مستعمل ملتا ہے۔

اسم نکرہ (مؤنث - واحد)

فہرست

[ترمیم] معانی

1. غبار، دھول، مٹی۔

"کہیں راستے کی گرد نے نظر کو دھندلا، تصور کو داغ دار، قدم کو لغزش پر آمادہ نہیں کیا۔"، [1] 2. { مجازا } بے حقیقت، ہیچ، ماند۔

"ذمہ داری کا احساس ٹھوس تجربہ اور زندہ حقیقت کے آگے گرد ہو کر رہ گیا۔"، [2]

3. { شکار } آٹھ یا دس نمبر کے چھرے۔

(شکار، 122:1)۔

4. نفیس ریشم کی ایک قسم؛ دھلے ہوئے ریشم کا بنا ہوا کپڑا۔

(اصطلاحات پیشہ وراں، 85:2؛ لغات ہیرا)

[ترمیم] انگریزی ترجمہ

Going round, revolving; traversing, travelling or wandering over, or through, or in; Dust; the globe; fortune.

[ترمیم] مترادفات

دھُول، مَیل، خاک، کُدُورَت، غُبار، رَہِین، مِٹّی،

[ترمیم] مرکبات

گَرْدِ راہ، گَرْد و غُبار، گَرْدآلُود، گَرْدباد، گَرْد آلُودَہ، گَرْد آمیزی، گَرْد باد، گَرْد بَرْد، گَرد پوش، گَرد خورَہ، گَرْدِ کارْواں، گَرْد کَش، گَرْد گِیر

[ترمیم] روزمرہ جات

گرد ہو (جانا | ہونا) 
ماند ہو جانا، بے رونق ہو جانا، بے حقیقت ہو جانا، بے اثر ہو جانا۔

؎ میناس، کیا خبر ہے یہ آپس کے وسوسے ہو جائیں گرد اس بڑی شورش کے سامنے، [3]

ہوا ہونا، غائب ہونا، معدوم ہو جانا۔

؎ لال یہ کہاں رہا زرد ہو کے رہ گیا رنگ اب کہاں ہے رنگ گرد ہو کے رہ گیا، [4]

مر مٹنا، فنا ہو جانا۔

؎ گرد تو ہو گئے ترے عاشق کیا ستم ہو زیادہ اس سے خاک، [5]

گرد کو نہ پانا 

ہمسری نہ کر سکنا، مقابلہ نہ کر سکنا، پیچھے رہ جانا۔

"تحت الشریٰ کے انتہائی حدود تک چلی جاتی ہوں۔ میرا دامن پکڑنا کیسًا کوئی میری گرد کو بھی نہیں پا سکتا"، [6]

گرد جمنا 

کس چیز یا جگہ پر دھول بیٹھ جانا، غبار کا ایک جگہ بیٹھ جانا۔

؎ جمی صحرا نوردی سے یہاں تک گرد پاءوں پر کہ اب معلوم ہوتی ہے مری زنجیر مٹی کی، [7]

گرد جھاڑنا 
مارنا، سزا دینا۔

"ایک روز سربازار اس مہابرہمن کی خوب گرد جھاڑی گئی"، [8]

تنفیع کرنا، چھانٹنا، چھٹائی کرنا، غیرضروری انبار سے کام کی چیز نکالنا۔

"واقعات کی گرد جھاڑنے کے بعد انہیں مخصوص سیاق و سباق کے ساتھ منسلک کر کے پیش کر دیا"، [9]

گرد بھی نہ پانا۔ 

نام نشان نہ ملنا، سراغ لگانے میں ناکام ہو جانا۔

؎ یہ مہرو ماہ چلے تھوڑی دور ساتھ مرے پھر اس کے بعد مری گرد کو بھی نہ پا سکے، [10]

گرد اٹھنا 

ہوا کے زور میں غبار کا زمین سے بلند ہونا۔

؎ گری غش کھا کے سایہ کے برابر دھوپ میداں میں بگولہ کی طرح سے گرد اٹھی اور تیورائی، [11]

گرد اڑانا 
غبار کو ہوا کے زور سے فضا میں پھیلا دینا، دھول اڑانا۔ (فرہنگ آصفیہ، نور اللغات)
تباہ کرنا، برباد کرنا، خاک اڑانا، اندھیرا کرنا۔

"میں وہ طاقتور ہوں جو لڑائیوں کو ابھارتا ہے اور اپنی طاقت سے گرد اڑاتا ہے۔"، [12]

اناج برسانا، غلے کی خاک نکالنا۔ (فرہنگ آصفیہ)
گرد دینا 

غبار کا پانی کے چھینٹے سے اڑنے کے قابل نہ رہنا۔

؎ معدوم جوش گریہ سے کیا ہو بخار دل کچھ گرد تو نہیں جو یہ باراں سے دب رہے، [13]

[ترمیم] حوالہ جات

  1. ( 1988ء، آج بازار میں پایہ جولاں چلو، 71 )
  2. ( 1986ء، جوالا مکھ، 234 )
  3. ( 1984ء، قہرعشق (ترجمہ) 101۔ )
  4. ( 1925ء، شوق قدوائی، عالم خیالی، 30۔ )
  5. ( 1784ء، داد، دیوان، 44۔ )
  6. ( 1923ء، مضامین شرر، 731:2،1 )
  7. ( 1870ء، الماس درخشاں، 210۔ )
  8. ( 1931ء، نہتارانا، 109 )
  9. ( 1987ء، اردو ادب میں سفرنامہ، 250۔ )
  10. ( 1960ء، جگرمراد آبادی، دیوان۔ )
  11. ( 1916ء، نظم طباطبائی، 13 )
  12. ( 1923ء، ویدک ہند، 138 )
  13. ( 1846ء، آتش، کلیات، 170 )

[ترمیم] مزید دیکھیں

عرض ناشر
لغت کو ممکنہ غلطیوں سے پاک کرنے کی پوری کوشش کی گئی ہے پھر بھی انسان خطا کا پتلا ہے لغت کو مزید بہتر بنانے کے لئے یا لغت کے استعمال میں کسی بھی قسم کی دشواری کی صورت میں admin@urduencyclopedia.org سے رابطہ کریں۔
ذاتی اوزار
متغیرات
ایکشنز
رہنمائی
اوزاردان
دیگر شعبہ جات
Besucherzahler brides of ukraine
website counter